پارٹی قیادت فوج مخالف بیانیے سے باز آجائے۔۔!! (ن)لیگ کے 15 مرکزی رہنماؤں نے علمِ بغاوت بُلند کر دیا، شریف خاندان لڑکھڑا گیا

پشاور (نیوز ڈیسک ) 15 لیگی رہنماوں نے پارٹی قیادت کے متنازعہ بیانات کے خلاف آواز بلند کر دی۔ سینئر لیگی نائب صدر کا کہنا ہے کہ پارٹی قیادت سے مطالبہ ہے کہ پاک فوج اور پاکستان کی سالمیت اور بقا کیخلاف بیانات دینا کا سلسلہ بند کیا جائے، اس صورتحال سے بھارت فائدہ اٹھا رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ن لیگ کے پی کے صوبائی سینئر نائب صدر انتخاب چمکنی بھی پارٹی بیانئے کی مخالفت میں کھل کر سامنے آگئے۔

انتخاب چمکنی نےپندرہ مسلم لیگی رہنماؤں کے ساتھ نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پیدائشی مسلم لیگی ہیں، پارٹی میں رہ کر اپنی بات کرینگے، بیانیےمیں ترمیم ہوسکتی ہے۔ انتخاب خان چمکنی نے کہا کہ پارٹی قیادت پاکستان کی سالمیت اوربقا کے خلاف بیانات نہ دے، اداروں کے ساتھ کھڑا ہونا ہمارے نظریےکی بنیاد ہے، حالیہ بیانیہ پارٹی کے نظریہ کی نفی ہے، قیادت کا بیانیہ اداروں اور عوام کی شہادتوں کی تذلیل ہے۔ قیادت کےحالیہ بیانات کا فائدہ بھارت اٹھارہاہے، بے پناہ مسائل میں اداروں کو مضبوط بنانےکی ضرورت ہے۔ اس دوران ان کے ہمراہ ن لیگ کے پی کےنائب صدر فضل اللہ داؤد زئی، نائب صدر ن لیگ کےپی مجیب خان، آرگنائزر عظمت خان، ضلعی صدر ن لیگ ذکااللہ ، ویمن ونگ کی نائب صدریاسمین بیگم اور ن لیگ ویمن ونگ کی سیکریٹری اطلاعات رابعہ سعید بھی موجود تھیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں